Ertugrul Ghazi 

 ارطغرل غازی  تیرہویں  (13) صدی کے انوتولیا (ترکی) کی تاریخ سے ماخوذ ایک عظیم شان  داستان ہے ۔ایمان ،انصاف  اور محبت کی  روشنائی سے لکھی  ایک بہادر جنگجو کی کہانی ہے جس نے اپنی ثابت قدمی اور جرات سے نہ صرف اپنے قبیلے بلکہ تمام عالم اسلام کی تقدیر بدل ڈالی ۔اوغوز ترکوں کے خانہ بدوش  کائی قبیلے کو  ایک ایسے وطن کی تلاش  جہاں ان کی نسلیں پروان چڑھیں۔

 

کائی قبیلے کے سردار سلیمان شاہ کے بیٹے ارطغرل  غازی نے اسلام کی سر بلندی کی خاطر  اپنی جان  ومال ،عزیز و اقارب کو خطرے میں ڈال کر اپنے جنگجوؤں کے ساتھ مختلف ادوار میں صلیبیوں ،منگولوں،سلجوک سلطنت میں موجود غداروں اور دیگر اسلام دشمن عناصر کوشکست دی۔1280 میں ارطغرل کی وفات کے بعد اس کے بیٹے عثمان  نے عظیم  سلطنت عثمانیہ کی داغ بیل ڈالی اور یون خانہ بدوشوں کے قبیلے نے تین براعظموں پر 600 سال حکومت کی۔

یہ ڈرامہ تاریخی کرداروں  اور واقعات سے ماخوذ ہے۔

 

Ertugrul Ghazi is a great story from the thirteenth (13th) century history of Anatolia (Turkey). Written in the light of faith, justice and love, it is the story of a brave warrior who with his steadfastness and courage not only helped his tribe but also The destiny of the entire Islamic world has changed.

Ertugrul Ghazi, the son of Suleiman Shah, the chief of the Kai tribe, risked his life, property and relatives for the sake of Islam, along with his warriors, the Crusaders, the Mongols, the Saljok in the Seljuk Empire and other anti-Islamic elements. After the death of Ertugrul in 1280, his son Usman annexed the Great Ottoman Empire and the nomadic tribe ruled over three continents for 600 years.

The play is based on historical characters and events.

 

Contact Us
Socialize with Us
  • Facebook
  • YouTube
2020@dramaspakistan.com all rights reserved